اداریہ

بحرانوں کا چنگل

بحرانوں کا چنگل

حکمران دھڑوں کی اپنی لڑائی اور تضادات اس قدر شدت سے بھڑک رہے ہیں کہ ان کے پہلے سے رینگتے نظام کا بحران کئی گنا بڑھ گیا ہے۔

جب افغانستان سرخ تھا!

جب افغانستان سرخ تھا!

آج کی نئی نسل کو اس عظیم انقلاب کے اسباق طبقاتی جدوجہد میں سمو کے اس سرخ سویرے کی نوید بننا ہو گا جو سامراجیت، بنیاد پرستی اور سرمایہ داری کی تاریکیوں کو مٹا کے رکھ دے۔

یوکرائن: سامراجی تصادم کی بربادیاں

یوکرائن: سامراجی تصادم کی بربادیاں

محنت کش طبقہ کسی ایسی جنگ کی حمایت نہیں کر سکتا جو سامراجی طاقتوں کی آپسی چپقلش اور مخاصمت پر مبنی ہو۔ چاہے وہ جنگ ایک بڑی سامراجی طاقت کے خلاف ایک چھوٹی سامراجی طاقت کی ”دفاعی جارحیت“ پر ہی مبنی کیوں نہ ہو۔

نیا سال 2022ء: دکھا صبح نئی، شام نئی!

نیا سال 2022ء: دکھا صبح نئی، شام نئی!

زیادہ تر احتجاج ترقی پسندانہ کردار کے حامل تھے جن میں عوام نے نیولبرل پالیسیوں، مہنگائی، بیروزگاری، آمرانہ طرزِ حکومت اور ریاستی جبر وغیرہ کے خلاف غم و غصے کا اظہار کیا۔

جب مزدور نے زمانے بدلے!

جب مزدور نے زمانے بدلے!

ایک ایسا معاشرہ تعمیر کرنا ہے جہاں انسان نہ صرف معیشت، ریاست اور سیاست بلکہ اپنی روح، احساس اور جبلت کو بھی اپنے شعور کے تابع کر کے اشتراکی فلاح کے لئے بروئے کار لا سکے۔

افغانستان پہ چھائی تاریکی

افغانستان پہ چھائی تاریکی

ضرورت اس امر کی ہے کہ ان تاریکیوں میں بھی انقلابی رجائیت سے سرشار ہو کر طبقاتی جدوجہد کے وہ چراغ روشن کیے جائیں جو ایک سوشلسٹ سویرے کی نوید بن سکیں۔

بٹوارے کے رستے زخم

بٹوارے کے رستے زخم

غریبوں کے خون سے کھینچی گئی سامراجی لکیروں کو مٹانے اور انسانیت کو معاشی، سیاسی و سماجی آزادی دلوانے کے لئے اس خطے کے محنت کشوں کو ابھی فیصلہ کن طبقاتی لڑائی لڑنی ہے۔

دیوالیہ معیشت کی بجٹ سازی

دیوالیہ معیشت کی بجٹ سازی

معاشیات ایک نسبتاً پیچیدہ اور مشکل علم ہے۔ تاہم سرمایہ داری میں اسے دانستہ طور پر مزید گنجلک کر دیا جاتا ہے تاکہ طبقاتی استحصال اور لوٹ مار کی واردات مشکل معاشی اصطلاحات میں کہیں گم ہو جائے۔

تاریخ کا دوراہا

تاریخ کا دوراہا

مارکسی نظریات سے لیس انقلابی قیادت کے تحت ہی پرولتاریہ اس نظام کو اکھاڑ پھینک کر نسل انسان کو بربریت کی کھائی میں گرنے سے بچا سکتا ہے۔

امریکہ: انتخاب کا فریب!

امریکہ: انتخاب کا فریب!

امریکی اسٹیبلشمنٹ کی بھرپور کوشش ہے کہ ٹرمپ سے جان چھڑائی جائے اور باگ ڈور جو بائیڈن جیسے اپنے گھاگ اور ”مہذب“ نمائندے کو سونپی جائے۔

استحکام سے عاری نظام

استحکام سے عاری نظام

حکمرانوں کے اس نام نہاد ’نئے پاکستان‘ میں بھی مہنگائی، غربت اور بیروزگاری کا عفریت آبادی کی وسیع اکثریت کو نگل رہا ہے۔