Post Tagged with: "Imran Khan"

نیشنلائزیشن کے دشمن

نیشنلائزیشن کے دشمن

موصوف نے 1970ء کی دہائی میں بھٹو حکومت کی نیشنلائزیشن کو پاکستان کی تاریخ کا ’’بدترین معاشی جرم‘‘ قرار دیا ہے۔

December 1, 2018 ×
’تبدیلی‘ کا کیا ہو گا؟

’تبدیلی‘ کا کیا ہو گا؟

جو امیدیں عمران خان سے وابستہ کی گئی ہیں اور جو خواب اس نے دکھائے ہیں ان کا بہت جلد ٹوٹنا ناگزیر ہے۔

July 28, 2018 ×
دھرنا پھر سے گُم!

دھرنا پھر سے گُم!

بحرانوں میں اپوزیشن پارٹیاں اپنے مجرمانہ کردار کے حامل قیدیوں کو چھڑاتی ہیں۔ دھرنوں اور لاک ڈاؤن کی دھمکیوں اور یلغار کی آڑ میں کئی طرح کی سودے بازیاں ہوتی ہیں۔

November 2, 2016 ×
کھیل ختم؟

کھیل ختم؟

تحریک انصاف ایک ایسا غبارہ ہے جس کی ہوا کئی بار نکلنے کے بعد ریاست اور میڈیا کے کچھ حصوں کی جانب سے دوبارہ بھرتی جاتی رہی ہے لیکن یہ عمل ہمیشہ جاری نہیں رہ سکتا۔

November 1, 2016 ×
تحریک انصاف67ء کی پیپلزپارٹی کیوں نہ بن سکی؟

تحریک انصاف67ء کی پیپلزپارٹی کیوں نہ بن سکی؟

| تحریر: لال خان | 30 اکتوبر 2011ء کو لاہور کے منٹو پارک میں ہونے والے جلسے کو تحریک انصاف کے ایک نئے جنم سے تعبیر کیا جاتا ہے۔ شرکا کی تعداد جو بھی ہو، انہیں جیسے بھی لایا گیا ہو یا وہ خود آئے ہوں، لیکن یہ اس قسم […]

April 28, 2016 ×
وطن میں جلاوطن!

وطن میں جلاوطن!

[تحریر: لال خان] موجودہ حکومت کے وزرا ترجمان آج کل بہت زور شور سے وطن پرستی کی نعرہ بازی کررہے ہیں۔ عمران خان کی اس کال پر کہ وہ پورا پاکستان بند کریں گے، کو یہ پاکستان کے متوالے ملک دشمنی اور وطن سے غداری قرار دے رہے ہیں۔ ان […]

December 9, 2014 ×
سناٹے کا شور!

سناٹے کا شور!

اداریہ جدوجہد:- عجیب دور سے ہم گزر رہے ہیں۔ سیاسی اور مذہبی جلسوں کی یلغار ہے، ’’ترقیاتی‘‘ منصوبوں کی بھرمار ہے، بیرونی دوروں کی تیز رفتار ہے۔ اتنا شور ہے کہ کچھ سنائی نہیں دیتا، اتنی حرکت ہے لیکن معاشرہ ساکت۔ سکوت میں بھی وقت رکتا نہیں، چلتا رہتا ہے، […]

November 26, 2014 ×
اقلیتی طبقے کے سیاسی تماشے

اقلیتی طبقے کے سیاسی تماشے

[تحریر: قمرالزماں خاں] انقلابی نظریات کے بغیر استوار سرگرمی خواہ کتنی بڑی کیوں نہ ہو، وہ نہ تو دیرپا اثرات مرتب کرسکتی ہے اور نہ ہی اپنے وجود کو برقرار رکھ سکتی ہے۔ دھرنوں کی سیاست کے پیچھے عوامل، متنازعہ بیان بازی کے باوجود مخفی نہیں رہے۔ ’’بھاری مینڈیٹ‘‘ لینے […]

November 24, 2014 ×
ہوتا ہے شب و روز تماشا۔۔۔

ہوتا ہے شب و روز تماشا۔۔۔

[تحریر: لال خان] پچھلے ڈیڑھ سال کے دوران اس ملک میں معیشت اور معاشرت کی طرح سیاست کی تنزلی بھی بڑھی ہے۔ چوہدری شجاعت اور قائم علی شاہ جیسے چند ایک سیاستدان ہی ایسے رہ گئے ہیں جن کے مزاح میں تھوڑا دم باقی ہے۔ سنجیدہ بات کرنے والوں کی […]

November 16, 2014 ×
پاکستان: انتشار آخر کب تک؟

پاکستان: انتشار آخر کب تک؟

[تحریر: پارس جان] غیر فطری مملکتِ خداداد اپنے فطری اور منطقی انجام کی طرف بڑھتی ہوئی دکھائی دے رہی ہے۔ تمام اہلِ دانش اور تجزیہ نگار حالیہ بحران کو بدترین سیاسی بحران قرار دے رہے ہیں حالانکہ یہ سیاسی بحران خود وجہ نہیں بلکہ علامت ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ […]

October 9, 2014 ×
اصلاح پسندی کی نامرادی

اصلاح پسندی کی نامرادی

[تحریر: لال خان] 2013ء کی انتخابی مہم میں عمران خان کا وقتی ابھار شدید سماجی بحران، سیاسی جمود اورعمومی سوچ اور نفسیات کے گہرے ابہام کا نتیجہ تھا۔ یہ کیفیت ہمیں عالمی سطح پر کئی ممالک میں نظر آتی ہے۔ خاص کر 2008ء کے بعد سے اٹلی سے لے کر […]

September 28, 2014 ×
جب وقت کا بدلا مزاج؟

جب وقت کا بدلا مزاج؟

[تحریر: لال خان] سٹیٹ بینک کی تازہ رپورٹ بھی بری خبر ہی لائی ہے۔ اس ملک میں پہلے بھی کم ہی کوئی اچھی خبر سننے کو ملتی ہے لیکن وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ بری خبروں کا تواتر اور شدت بڑھتی ہی چلی جارہی ہے۔ حالیہ رپورٹ میں انتباہ کیا […]

September 23, 2014 ×
سیاست کی کمرشلائزیشن

سیاست کی کمرشلائزیشن

[تحریر: لال خان] ابھی پچھلی نسل کی ہی تو بات ہے کہ ضیا الحق کی خونی آمریت کے خلاف لازوال جرات اور ہمت سے جدوجہد کی گئی۔ نوجوان، مزدوراور کسان قید و بند کی صعوبتیں جھیلتے رہے۔ گولیوں کی بوچھاڑ میں جلسے جلوس اور احتجاجی مظاہرے ہوتے رہے اور یہ […]

September 11, 2014 ×
سلگتی ضرورت کا شعور

سلگتی ضرورت کا شعور

[تحریر: لال خان] آج کل پاکستان میں ’’نظام‘‘ تبدیل کرنے کی دوڑ لگی ہوئی ہے۔ مالیاتی سرمائے کے مختلف سیاسی دھڑوں میں سے کوئی ’’انقلاب‘‘ لارہا ہے، کسی کو ’’تبدیلی‘‘ چاہئے تو کوئی عوام کو ’’آزادی‘‘ دلانے کے درپے ہے۔لیکن ’’نظام‘‘ کو تبدیل یا ’ٹھیک‘ کرنے کے یہ تمام دعوے […]

September 5, 2014 ×
سوشل ڈیموکریسی: انقلابی سوشلزم کا سبوتاژ!

سوشل ڈیموکریسی: انقلابی سوشلزم کا سبوتاژ!

[تحریر: لال خان] نظریات سے عاری سیاست کی پارٹیاں اور رہنما ایسے شتر بے مہا بن جاتے ہیں جن کی کوئی سمت ہوتی ہے نہ مقصد اور منزل۔ حالیہ لانگ مارچوں اور دھرنوں کے سرخیل لیڈروں کی نان سٹاپ تقاریرمیں تذبذب، تضاد، مضحکہ خیز استدلال اور بے معنی وعظ و […]

September 3, 2014 ×